گوشہءنور کے سالکین۔
سلوک کے مسافر کو اپنے سفر کی ابتدا میں جو کیفیات اور انعامات موصول ہوتے ہیں۔اور جو خطرات لاحق ہوتےہیں ان کو ہمارے ایک پیج ممبر ڈاکٹر احمد کبیر نے انتہائی احسن طریقے سے قلم بند کیا ہے۔


جواس راہ کے مسافر وں کے لے مشعلِ راہ ہیں۔۔
نیےلکھنے والوں کی حوصلہ افزائی ضرور کریں۔۔ شکریہ
” اسرارِ سالکین”
سالک جب سلوک کی منازل طے کر رہا ہوتا ہے ۔تو اس کی کامیابیوں پر نظر رکھنے والی” ذات” اس کو چھوٹے چھوٹے انعام و اکرام سے نوازتی رہتی ہے ۔۔۔
اس کی مثال بالکل ایسے ہی ہے جیسے کوئی آپ کا بہت پیارا محبوب آپ کو کوئی چیز تحفے میں دے لیکن اپنے تعلقات کا راز افشا نہ کرنا چاہیے۔ تو آپ اکیلے میں چھپ کر اس کے تحفے سے کھیلیں گے ۔
یا اس تحفے سے اس کی خوشبو کو محسوس کریں گے۔ لیکن نہیں چاہیں گے کہ دوسروں کو اس محبت بھرے تحفے کا پتہ چلے۔۔۔
۔روحانیت کے اساتذہ اپنے طلبہ سے سختی سے ان اسرارکو پوشیدہ رکھنے کا وعدہ لیتے ہیں۔۔۔
جب تک کہ بہت ضروری نہ ہو ۔ روحانیت کی دنیا میں یہ تحائف کوئی مادی وجود تو نہیں رکھتے لیکن روحانیت کے طالب علم کے جسم میں ایک ایسی بجلی ضرور بھر دیتے ہیں جو اگلی منزلوں پر جانے کی تڑپ کو مزید زیادہ کر دیتی ہے۔
یہ تحائف ایک طرح سے سالک کی ذہنی آسودگی کا باعث بھی بنتے ہیں ۔جن سے اس کو پتہ چلتا ہے کہ اس کی شبانہ روز محنت کسی کی نظر میں ہے۔ اور” وہ” اس کو سراہ رہا ہے ۔ سالکین ان تحائف کو پا کر اپنے گھوڑے کو ایڑ لگاتے ہیں اور سالوں کے فاصلے مہینوں میں طے کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ اور ہر نئی منزل ان کے سکون قلب میں اضافے کا باعث بنتی ہے۔ لیکن جو ان اسرار کو افشا کر دیتے ہیں وہ بسا اوقات اپنی منزل کا نشان گم کر بیٹھتے ہیں اور ان کا مہینوں کا سفر سالوں میں بھی پورا نہیں ہو پاتا۔ ” پروین شاکر “نے کیا خوب کہا ہے کہ۔۔۔
“جو ایک لفظ کی خوشبو نہ رکھ سکا محفوظ
میں اس کے ہاتھ میں ساری کتاب کیا دیتا۔۔۔۔”
۔ اور کچھ ایسے بھی ہیں جن کو اس بے ادبی پر پٹخ دیا جاتا ہے۔ سب کچھ چھن جاتا ہے۔منزلیں روٹھ جاتی ہیں اور راستے منہ موڑ لیتے ہیں …
یہ تحائف کیا ہیں ؟؟
یہ کون سے اسرار ہیں؟
کبھی یہ صرف ایک خوبصورت خواب کی شکل میں ہوتے ہیں۔۔۔۔
۔ اور کبھی جاگتے میں خوشبو کی ایک لہر ہوتی ہے ۔۔۔۔۔
جو آپ کے سارے وجود کو معطر کئے دیتی ہے۔۔
رگ و پے میں ایک ان دیکھا سرور چھا جاتا ہے۔۔۔
سب دنیاوی چیزیں ہیچ لگنے لگ جاتی ہیں۔۔۔۔
اور کبھی یہ آپ کو کسی معاملے میں اتنی خوبصورت رہنمائی عطا کرتے ہیں۔۔۔۔۔۔
کہ آپ خود ہی اپنی ذہانت پر حیران ہو جاتے ہیں۔ ایک خوبصورت فسوں جو آپ کے اس” ذات با برکات “سے تعلق پر سایہ فگن رہتا ہے.
ڈاکٹر احمد کبیر ۔(اٹلانٹا ۔۔امریکہ)
تحریرپسند آئے آپ کے روحانی سفر میں معاون ہو تو کمنٹ سیکشن میں اپنی راۓ ضرور دیجیۓ۔شیر کریں تاکہ اس کارخیر میں آ پ ہمارے مددگار بن سکیں۔۔۔۔شکریہ گوشہءنور

Related Posts

Leave a Reply